Share

شنکراچاری خانقاہ میں 10 غیر ملکی لوگوں کی ہوئی ‘گھر واپسی’

نئی دہلی: ملک میں بی جے پی حکومت کے آنے کے بعد ملک میں تبدیلی مذہب کو لے کر جم کر ہنگامہ مچا ہے اور اسے ہندو تنظیموں سے گھر واپسی بتایا تھا مگر اب جگد گرو شنکراچاری مالک سوروپاند سرسوتی کی طرف سے تھائی لینڈ کے دس شہریوں کا تبدیلی مذہب کراکر ہندو مذہب یعنی سناتن دھرم کا پیروکار بنایا ہے.

gharwapasiیہ تمام غیر ملکی ہے اور بدھ مت کو مانانے والے تھے مگر اب انہونے باقاعدہ سناتن مذہب کو اپنایا ہے ہالانکہ شنکراچاریہ اسے مذہب پروتن نہیں مانتے بلکہ وہ اسے ہندو سنسکار دینا مانتے ہے. جبکہ سناتن مذہب کو اپنانے والے بوددھشٹ خوش ہے انہوں نے سناتن مذہب اپنایا ہے اور تمام کی سناتن مذہب کے مطابق ہندو نام بھی دیے گئے ہیں.

تھائی لینڈ سے ہردوار پہنچے سات مرد اور تین خواتین نے آج شنکراچاریہ خانقاہ میں باقاعدہ سناتن مذہب کو اپنایا ہے. اس سے قبل گرو مراحل کی عبادت کی گئی اور انکو شنکراچاریہکی طرف سے ہندو نام فراہم کئے گئے اور گرمتر فراہم کیا گیا. تمام کو رام کے نام کا جاپ کرنے کے لئے کہا گیا. بدھ مت سے سناتن مذہب میں تبدیلی مذہب کو شنکراچاری تبدیلی مذہب نہیں مانتے بلکہ اسے تدفین دینا بتا رہے ہیں.

شنکراچاری مانتے ہے تمام افراد پیدائش سے سناتن ہوتے ہیں اور بچہ فخر میں پانچویں مہینے میں خدا کا نام لینے کا عہد کرتا کہ ہیں کی وہ ہندو بناتے نہیں ہے اور تدفین دیتے ہیں. شنکراچاری مانتے ہے اگر کسی کو دوسرے مذہب میں داخل ہو کر اتمگلان ہو رہی ہے اور وہ واپس آنا چاہتے ہیں تو ان کا کفارہ کروا کر ان کو واپس لے لیں گے.

ہندو مذہب کو قبول کرنے والے تھائی لینڈ کے یہ باشندے خاصے خوش ہے اب وہ سناتن صالح بن گئے ہے. دراصل ان میں سے بہت سے خود ہی سناتن مذہب کے مطابق عبادت کرنے لگے تھے مگر آج وہ باقاعدہ ہندو بن گئے ہے. ہندو بنانے کی ترغیب ان کو سوپن میں گنیش خدا کا دکھانا اور پھر ہندوستان میں ان ہی خدا کے مندر میں درشن کرنا بنا.